60

سوتے وقت موبائل فون قریب رکھنا صحت کیلئے خطرناک: تحقیق

رات کوموبائل فون پاس رکھنا صحت کیلئے خطرناک ہے؛

سوتے وقت موبائل فون پاس رکھنا صحت کیلئے خطرناک ہےاس سے نکلنے والی شعائیں کینسر، بانجھ پن اور ذہنی امراض کا باعث بنتی ہیں  بچوں کیلئے بے حد نقصان دہ ہیں.جب سے اسمارٹ فون کا دور آیا ہے، نوجوان نسل اس کی عادی ہوچکی ہے، حتیٰ کہ سوتے وقت بھی موبائل فون کو اپنے سرہانے رکھ کر سویا جاتا ہے،مگر محقیقن نے خبردار کیا ہے کہ یہ صحت کے لیے کافی خطرناک ہے۔امریکی ریاست کیلیفورنیا کے محکمہ صحت کی تحقیق کے مطابق سونے سے پہلے صارفین کو اپنا موبائل فون خود سے دور رکھ دینا چاہیے کیونکہ فون سے نکلنے والی شعاعیں انسانی صحت کے لیے خطر ناک ثابت ہوتی ہیں۔

فون سے نکلنے والی شعائیں عورت کو بانجھ بنا سکتی ہیں؛

تحقیق کے مطابق موبائل فونز معلومات کے تبادلے کے لیے کم فریکوئنسی والے ریڈیو سگنلز استعمال کرتے ہیں، خصوصاً اُس وقت جب صارف اسٹریمنگ یا بڑی فائل ڈاؤن لوڈ کررہا ہو، اس سے جو شعاعیں نکلتی ہیں وہ صحت کے لیے خطرناک ثابت ہوتی ہیں جس سے کینسر، ذہنی امراض اور بانجھ پن جیسی بیماریوں میں مبتلا ہونے کے خطرات بڑھ جاتے ہیں۔
تحقیق سے یہ بات تو ثابت نہیں کہ موبائل فونز سے نکلنےوالی شعاعیں کس حد تک خطرناک ہیں لیکن اس بات کے کافی شواہد موصول ہوئے ہیں کہ یہ کینسر، بانجھ پن اور ذہنی امراض کا باعث بنتی ہیں اور بچوں کے لیے بے حد نقصان دہ ہیں۔

کھانا کھاتے وقت بھی فون کا استعمال نہین کرنا چاہیئے؛

ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ سونے سے 2 گھنٹے پہلے اپنا موبائل فون استعمال نہ کریں اور۔سوتے وقت موبائل فون کو خود سے کئی فٹ دور رکھ کر سوئیں.دوسری جانب کھانا کھاتے وقت بھی موبائل فون استعمال کرنے سے گریز کرنا چاہیے، کیونکہ کھانا کھاتے وقت اگر موبائل فون استعمال کیا جاتا ہے تو اس سے دماغی صحت متاثر ہوتی ہے اور ذہنی کمزوری کا شکار ہونے کے خطرات میں اضافہ ہو جاتا ہے.

Breaking news,News update,News urdu,World news,Urdu Pakistan,Urdu news,Health News

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں