105

بھارت میں 98 سالہ شخص نے ماسٹرز کی ڈگری حاصل کی.

سالانہ بارھواں کنووکیشن؛

مشہور کہاوت ہے کہ شوق کا کوئی مول نہیں ہوتا۔لیکن اگر یہ شوق تعلیم کے حصول کا ہو اور اس میں محنت اور لگن بھی شامل ہو تو۔دنیا کی کوئی طاقت بھی اس شوق کو پورا ہونے سے نہیں روک سکتی۔بھارتی میڈیا ویب سائٹس کے مطابق راج کمار ویش نے 96 برس کی عمر میں ریاست بہار کے شہر پٹنا کی نلندا یونیورسٹی میں داخلہ لیا ۔اور دو سال بعد انہوں نے معاشیات میں ماسٹرز کا امتحان پاس کیا۔ریاست میگھالیہ کے گورنر گنگا پرساد نے نلندا اوپن یونیورسٹی کے 12ویں سالانہ کنووکیشن کے موقع پر راج کمار ویش کو ڈگری دی۔اور اس موقع پر کہا کہ راج کمار ویش کی طرح بھارت کے ہر شہری کے اندر تعلیم حاصل کرنے کا جذبہ اسی طرح ہونا چاہیئے۔

نلندا یونیورسٹی کے رجسٹرار؛

راج کمار ویش نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میں ماسٹرز کی ڈگری ملنے پر میں بہت خوش ہوں کیونکہ میں نے اس کے لیے بہت محنت کی تھی اور میری خواہش تھی کہ میں ماسٹرز مکمل کروں۔ انہوں نے نوجوانوں کو نصیحت کی کہ کیرئیر پر توجہ دینے کے ساتھ تعلیم پر بھی توجہ دیں۔نلندا یونیورسٹی کے رجسٹرار ایس پی سنہا نے کہا کہ یہ یونیورسٹی کے لیے بہت بڑی کامیابی ہے، راج کمار ویش اور ان کے عزم کو سلام پیش کرتے ہیں کہ انہوں نے اس عمر میں تعلیم کے حصول کی کوشش کی۔

یونیورسٹی کے نوجوانوں کے لئے سبق؛

ان کا کہنا تھا کہ ہم اس بات پر حیران ہیں کہ راج کمار نے ماضی میں اپنی توانائی کہاں صرف کی۔ایس پی سنہا کا کہنا تھا کہ راج کمار اس یونیورسٹی سے ماسٹرز کی ڈگری حاصل کرنے والے سب سے عمر رسیدہ شخص ہیں، یونیورسٹی ان کے نوٹس کو نوجوانوں کے لیے سبق کے طور پر اپنے پاس رکھے گی۔ راج کمار ویش نے گریجویشن 1938 میں آگرہ یونیورسٹی سے مکمل کی اور 1940 میں وکالت کی ڈگری حاصل کی، لیکن پھر نوکری ملنے کے بعد تعلیم کو آگے جاری نہ رکھ سکے۔

News update,News urdu,World news,Urdu Pakistan,Urdu news,Education News,India

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں