41

کلبھوشن کی انکے اہلخانہ سے ملاقات پاکستانی حکومت کی سازش تھی۔سشما سوراج

سشما سوراج کا سینٹ میں خطاب؛

اسلام آباد:سینیٹ میں سشما سوراج نے کہا کہ کلبھوشن کے اہلخانہ کو پاکستان میں ہراساں کیا گیا اس کے علاوہ ملاقات سے پہلے ان کی والدہ اور اہلیہ کے کپڑے تک تبدیل کروائے گئے۔ملاقات بعد کلبھوشن کی والدہ اور اہلیہ نے انہیں بتایا کہ کلبھوشن گھبرا کر بات کر رہا تھا اس کی بول چال سے یہ لگ رہا تھا کہ جیسے اسے قید کرنے والوں نے اسے جو کچھ سکھایا وہ وہی بول رہے تھے۔سشما سوراج نے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ کلبھوشن کے اہلخانہ کو دوسرے دروازے سے ملاقات کے لئے لے جایا گیااور جے پی سنگھ کو کچھ دیر بعد اندر جانے کی اجازت دی گئی۔

اہلخانہ کو بیوا بنا دیا گیا؛

وزیر خارجہ نے کہا کہ شادی شدہ عورتوں کو بیواؤں کی طرح پیش کیا گیا اور ملاقات سے پہلے دونوں خواتین کے منگل سوترا، بندیا اور چوڑیاں تک اتروائیں گئیں، کلبھوشن نے ملاقات میں سب سے پہلےماں سے اپنے والد کا پوچھا اورجب والدہ کے گلے میں منگل سوترا نہ دیکھا تو وہ سمجھا کہ والد گزر چکے ہیں۔ بھارتی وزیر خارجہ نے کہا کہ کلبھوشن کی والدہ مراٹھی میں بات کرنا چاہتی تھیں لیکن اس کی اجازت نہیں دی گئی اور وہاں موجود پاکستانی خاتون اہلکاروں نے ان کا انٹرکوم بھی بند کیا۔

اہلیہ کے جوتے میں کیمرا تھا؛

کلبھوشن کی اہلیہ کے جوتوں میں اگر کیمرا تھا تو ایئر پورٹ حکام میڈیا کو دکھاتے، ایئرپورٹ پر سیکیورٹی چیکنگ کے باوجود دونوں خواتین پاکستان پہنچیں، وہاں جوتوں میں لگی جپ، کیمرا یا کوئی اور چیز کیوں نہیں پکڑی گئی۔بھارتی وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ پاکستان اس ملاقات کو انسانی ہمدری کی بنیاد پر دکھا رہا ہے لیکن سچائی تو یہ ہے کہ انسانی ہمدری کی ملاقات میں انسانیت بھی غائب تھی اور ہمدری بھی، اس ملاقات کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے۔ یاد رہے کہ پاکستان کی طرف سے انسانی ہمدردی کی بنیاد پر پیشکش کے بعد بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو سے اس کی اہلخانہ کی ملاقات دفتر خارجہ میں کرائی۔

Latest news,News today,World news,Urdu Pakistan,Terrorist News,India,Sushma Swaraj

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں